منگل ۲۲ اکتوبر۲۰۱۹

انجینیرز کابجلی بنانے کا دلچسپ اور انوکھا تجربہ کامیاب

جمعرات, ۰۱   اگست ۲۰۱۹ | ۰۱:۴۳ شام

عائشہ آصف: کیلیفورنیا کےانجینیرز نے دریافت کیا ہے کےزنگ اورنمکین پانی کے ملاپ پربھی اب بجلی بن سکتی ہے۔

 نارتھ ویسٹرن اور کیل ٹیک یونیورسٹی کے انجینئرروں نے کئی تجربوں کے بعد دریافت کیا ہے کہ جب نمکین پانی کو زنگ آلود پرت  سے گزارا جاتا ہےتو بجلی کی معمولی مقدار پیدا ہوتی ہے۔ اس سے پہلے بھی نمکین پانی سے بجلی بنانے کے تجربے کئے گئے ہیں لیکن اس طریقے کی مددسےقدرے آسانی سے بجلی بنائی جا سکتی ہے۔ یہ نظام برقی حرکی (الیکٹروکائینیٹک)کے ذریعے بجلی پیداکرتا ہے۔ اس سے مراد ہے کہ جب نمکین پانی زنگ آلود پرت سے گزرتا ہے تو اس حرکت کی مدد سے بجلی پیدا ہوتی ہے۔ اس بات سے تو ہم سب واقف ہیں کہ نمک  میں سوڈیم آئن موجود ہوتے ہیں اوراور زنگ آلود پرت پر الیکٹران پائے جاتے ہیں۔آئن اور الیکٹرون کے درمیان ایک کشش کا نظام موجود ہے۔جب بھی نمکین پانی    بمع آئن،زنگ آلود پرت سے گزرتا ہے تب وہ پرت کے الیکٹران کو اپنی طرف کھینچتا ہےتواس طرح سے بجلی بنائی جاسکتی ہے۔ ابتدا میں چند ملی وولٹ بجلی پیدا ہوئی کیونکہ پیمانہ چھوٹا تھا ،اگر پیمانہ بڑھا دیا جائے تو زیادہ سےزیادہ بجلی پیدا کی جا سکے گی۔

تبصرہ کریں