پیر ۱۶ ستمبر۲۰۱۹

چاند پر اترتے ہوئے بھارتی خلائی گاڑی کا زمینی رابطہ ٹوٹ گیا

ہفتہ, ۰۷   ستمبر ۲۰۱۹ | ۱۱:۵۸ صبح

سیرت فاطمہ:بھارت کے خلائی ادارے نے کہا ہے کہ اس کا چاند کی جانب جانے والے اپنے مشن ، چندریان ٹو سے رابطہ ٹوٹ گیا ہے۔ یہ رابطہ اس وقت منقطع ہوا جب چندریان ٹو کچھ ہی دیر کے بعد چاند کی سطح پر اترنے والا تھا

خلائی تحقیق کے مرکز کے چیئر میں سروین نے کہا ہے کہ رابطہ منقطع ہونے سے اس قومی منصوبے کو دھچکہ لگا ہے جو چاند کے جنوبی قطبی علاقے میں اترنے کے لیے بنایا گیا تھا۔ ان کا کہنا تھا کہ خلائی ادارے کے سائنس دان اس سلسلے میں تحقیقات کر رہے ہیں۔ بھارت یہ توقع کر رہا تھا کہ امریکہ، روس اور چین کے بعد چاند کی سطح پر اپنا خلائی جہاز اتارنے والا وہ چوتھا ملک بن جائے گا۔ لیکن وہ اس سے آگے کا سوچ رہا ہے۔ بھارتی سائنس دانوں کو توقع تھی کہ ان کا چندریان ٹو چاند کے جنوبی قطبی علاقے میں اترے گا جن کے متعلق ان کا کہنا ہے وہ ایک ایسی جگہ ہے جہاں اس سے پہلے کسی ملک کا بھی کوئی سائنسی مشن نہیں گیا اور کوئی بھی اس علاقے کے بارے میں کچھ نہیں جانتا۔ خلائی جہاز سے الگ ہو کر چاند پر اترنے والی چاند گاڑی سائنس دانوں کو جنوبی قطبی علاقے کی سطح اور وہاں موجود معدنیات کے متعلق بہتر معلومات فراہم کرے گی۔ چاند گاڑی اتارنے کے لیے جس علاقے کا انتخاب کیا گیا تھا، وہاں کھائیاں اور گڑھے ہیں جن کے مطالعے سے سائنس دانوں کو نظام شمسی کے ابتدائی ادوار اور تخلیق کے متعلق معلومات حاصل ہو سکتی ہیں۔

تبصرہ کریں