بدھ ۰۳ مارچ۲۰۲۱

خاتون کی آواز میں بولنے والے طوطے کی وجہ سے ہمسایوں نےپولیس بُلالی

منگل, ۰۷   جنوری ۲۰۲۰ | ۰۱:۳۵ شام
Loading the player ...

ٓپ نے کبھی ایسا سنا ہے کہ ایک طوطے کی آواز کی وجہ سے کسی کو غلط فہمی ہو سکتی ہے؟اور ہمسایوں کو اس حوالے سے پولیس بلوانی پڑی۔

امریکی ریاست فلوریڈا کی پولیس کو ایک شکایت کال موصول ہوئی، شکایت کرنے والے شخص نے پولیس کو بتایا کہ ہمارے پڑوس سے ایک خاتون کی چیخوں کو آواز آرہی ہے جو کہ بار بار کہہ رہی کہ مجھے جانے دو۔ ام بیچ کاؤنٹی شیرف آفس کے ترجمان کے مطابق ہم شکایت موصول ہونے کے فوراً بعد ہی ان کی مدد کے لیے نکل گئے جن کی چیخوں کی اطلاع ہمیں دی گئی تھی لیکن جیسے ہی پولیس جائے وقوع پر پہنچی وہ یہ جان کر حیران ہوگئی کہ انہیں جن خاتون کی چیخوں کی اطلاع دی گئی تھی وہ دراصل کوئی خاتون نہیں بلکہ ایک طوطا تھا۔ پولیس جب وہاں پہنچی تو طوطے کے مالک نے انہیں بتایا کہ وہ یہاں گیراج میں اپنی اہلیہ کی  گاڑی ٹھیک کر رہے تھے اور ان کے ساتھ ان کا طوطا تھا جو ان سے باتیں کرنے کے ساتھ ساتھ گانا بھی گا رہا تھا کہ جس کے یہ الفاظ تھے ’مجھے جانے دو‘،  اس طوطے کی آواز کسی خاتون سے بے حد مشابہت رکھتی تھی۔ طوطے کے مالک نے بتایا کہ ’میں اپنے 40 سالہ طوطے ریمبو کو ساتھ بٹھاکر اس سے باتیں کرتے ہوئے اپنی اہلیہ کی گاڑی کے بریک ٹھیک کر رہا تھا اس دوران میرا طوطا گانا بھی گا رہا تھا کہ اچانک ہمارے ہاں 4 پولیس آفیسرز آ پہنچے‘۔ انہوں نے مزید بتایا کہ پولیس آفیسر نے ان سے کہا کہ ہمیں آپ کے پڑوس سے ایک کال موصول ہوئی تھی کیونکہ انہیں آپ کے گھر سے کسی خاتون کی چیخوں کی آواز آرہی تھی جو مدد طلب کر رہی تھی۔ طوطے کے مالک کا کہنا تھا کہ میرا طوطا اکثر اوقات چیخیں مارتا ہے اور کہتا ہے مجھے باہر نکالو یا مجھے جانے دو اور یہ میں نے اپنے طوطے کو بچپن میں سکھایا تھاتھا جب وہ اپنے پنجرے میں رہتا تھا۔

تبصرہ کریں