جمعرات ۰۹ جولائی۲۰۲۰

ڈی جی رینجر کا پاکستان اسٹاک ایکسچینج پر حملے میں غیر ملکی ایجنسی ملوث ہونے کے خدشے کا اظہار

پیر, ۲۹   جون ۲۰۲۰ | ۰۳:۲۵ شام

سندھ رینجر کے ڈائریکٹر جنرل میجر جنرل عمر احمد بخاری نے پاکستان اسٹاک ایکسچینج پر حملے میں غیر ملکی ایجنسی ملوث ہونے کے خدشے کا اظہار کیا ہے۔

   کراچی میں سی سی پی او کے ہمراہ نیوز کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ یہ واقعہ صبح 10 بج کر2 منٹ پر پیش آیا جس کے صرف 8 منٹ کے اندار قانون نافذ کرنے والے اہلکاروں نے مشترکہ طور پر کاروائی کرتے ہوئے تمام دہشت گردوں کو مار دیا تھا۔ تاہم پورے عمارت کو کلیئر کرنے میں 25 منٹ لگے۔ ان کا کہنا تھا کہ دہشت گرد دنیا میں  پاکستان کو غیر محفوظ ہونے کا تاثر دینے چاہتے تھے جسے انہوں ناکام بنانے کا دعویٰ کرتے ہوئے عوام سے قانون نافذ کرنے والے لوگوں پر اعتماد کرنے کی ہدایت کی۔ ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا اس میں غیر ملکی ایجنسی کے ملوث ہونے کے امکان کو رد نہیں کیا جا سکتا ہے۔ انہوں مزید کہا کہ رینجر کسی بھی غیر متوقع صورتحال سے نمٹنے کے لئے تیار ہے۔ 

 

 

                        آج صبح پیش آنے والے اس واقعے میں ایک پولیس اہلکار اور 2 سیکیورٹی گارڈ  سمیت ۷ افراد شہید ہوئے۔ فورسز کی جوابی کاروائی میں 4 دہشت گردوں کو مار دیا گیا تھا۔

 

                                                     پاکستان اسٹاک ایکسچینج پر حملے میں7افراد جاں بحق، تمام دہشتگرد ہلاک

 

 

                         ڈی جی رینجر نے تفصیلات بتاتے ہوئے دہشت گردوں کی فائرنگ سے راہگیروں کی زخمی ہونے  کی بھی تصدیق کی۔ ان مزید کہنا تھا کہ سیکیورٹی گارڈز نے دو دہشت گردوں کو پہلے ہی مار گرایا تھا جبکہ دو آگے آگئے تھے اور اس دوران ایک پولیس اہلکار بھی شہید ہوگیا تھا۔

 

                      اس سے پہلے ان کا کہنا تھا کہ دہشت گرد پوری عمارت کو یرغمال بنانا چاہتے تھے اس لئے انہوں نے عمارت میں داخل ہونے کی کوشش کی۔ ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ یہ دہشت گرد جدید اسلحے سے لیس تھے۔

تبصرہ کریں