بدھ ۰۵ اگست۲۰۲۰

لداخ کے علاقے میں بھارتی اور چینی فوجیوں کے درمیان جھڑپوں میں ایک افسر سمیت 3 بھارتی فوجی ہلاک

منگل, ۱۶   جون ۲۰۲۰ | ۰۳:۵۰ شام

لداخ کے علاقے میں بھارتی اور چینی فوجیوں کے درمیان جھڑپوں میں ایک افسر سمیت 3 بھارتی فوجی ہلاک ہوگئے ہیں۔

پاکستان کے انگریزی اخبار ڈان نے فرانسی خبر رساں ایجنسی اے ایف پی کے حوالے سے بتایا ہے یہ ہلاکتین دونوں فوجیوں کے درمیاں ہاتھا پائی کے نتیجے میں ہوئی ہیں۔ ہاتھا پائی ہونے کی تصدیق چینی وزاتِ خارجہ نے بھی کی ہے۔ اس حوالے چین کی وزارت خارجہ کے ترجمان ژاؤ لیجیان نے کہا کہ بھارتی فوجی دستوں نے دو مرتبہ سرحد پار کی، اشتعال انگیزی کی اور چینی اہلکاروں پر حملہ کیا. 

 

                    بھارتی فوج کے ترجمان نے دونوں اطراف اموات ہونے کا دعویٰ کیا ہے جبکہ چین نے کسی بھی اہلکار کے ہلاک یا زخمی ہونے کی تصدیق نہیں کی۔ چین کی وزارت خارجہ سے منسوب بیان میں کسی چینی فوجی کی ہلاکت کا ذکر نہیں ہے۔ بھارتی فوج کا کہنا ہے کہ واقعہ تبت کے عین سامنے واقع لداخ کے علاقے میں وادی گلوان میں پیش آیا۔ واضح رہے کہ مئی کے مہینے میں سوشل میڈیا پر اسی علاقے میں دونوں ملکوں کے فوجیوں کے درمیان ہاتھا پائی کی ویڈیو وائرل ہوئی تھی۔

 

 

                 ڈان اخبار نے اپنے ذرائع اور بھارتی خبر رساں اداروں کے حوالے سے بتایا ہے کہ بھارت نے پیپلز لبریشن آرمی کی جانب سے قبضہ کئے گئے علاقوں میں ہارماننے کا عندیہ دیا ہے۔ ان علاقوں میں شمال میں پین گونگ تسو جھیل اور اسٹریٹیجک اہمیت کا حامل وادی گلوان کا اہم علاقہ بھی شامل ہے۔                   اس وقت بھارت کا چین کے علاوہ نیپال کے ساتھ لیپو لیکھ کے سرحدی حدود پر تنازع ہے جسے حال ہی میں نیپالی پارلیمنٹ نے اپنے ملک کا حصہ قرار دینے کی منظوری دی ہے۔   

تبصرہ کریں